جھوٹے الزام کے تحت شریفوں کو ناجائز مقدمات میں پھنسوانے والے شرپسندوں کو عبرتناک سزا دینے کا قانون موجود ہوتا تو آج بے شمار ایسے لوگ جو بغیر کسی وجہ کے محض جھوٹے الزامات لگنے کی بنیاد پر پابندسلاسل ہیں ۔ان خیالات کا اظہار سابق وفاقی وزیر برائے مذہبی امور صاحبزادہ علامہ سید حامد سعید کاظمی شاہ صاحب نے اسلام آباد میں پیشی کے بعد ملاقات کرنے والے علماء اور مریدین سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جس میں ضلعی ناظم اعلیٰ جماعت اہلسنت مظفرگڑھ محمد اقبال لاشاری سعیدی، تحصیل ناظم غلام یٰسین سعیدی، ملک غلام احمد بوہڑ، مولانا عبدالعزیز، مولانا محمد سعید، غلام جیلانی ، محمد رمضان قادری، عبدالغفور اور محمد یار سمیت درجنوں احباب اہلسنت شامل تھے اورصاحبزادہ سید حامد سعید کاظمی شاہ صاحب کے بڑے صاحبزادہ سید احمد سعید کاظمی اس موقع پر موجود تھے۔
 

صاحبزادہ سید حامد سعید کاظمی شاہ صاحب نے مزید کہا کہ ایڑی چوٹی کا زور لگانے اور تمام ہتھ کنڈے استعمال کرنے کو باوجود سال بھر میں میرے خلاف حج کرپشن کا ایف آئی اے والے ایک روپیہ بھی ثابت نہیں کرسکے بلکہ چالان میں ایف آئی اے نے واضح طور پر لکھ دیا ہے کہ سید حامد سعید کاظمی کے خلاف حج کرپشن کا کوئی ثبوت نہیں ملا لیکن افسوس کہ جھوٹے اور من گھڑت الزامات کی بنا پر مجھے پابند سلاسل رکھا جا رہا ہے البتہ انہوں نے کہا کہ اگر دنیا کی عدالت سے انصاف نہ بھی ملا تو اللہ تعالیٰ کی لاریب عدالت سے سُرخرو ہو کر بہت جلد کندن بن کر رہا ہو جاؤں گا۔