طلاق ثلاثہ

٭ حضرات محترم! اگر کسی نے اپنی زوجہ کو ایک وقت میں تین طلاقیں دے دیں تو امام اعظم کے نزدیک گو اس نے خلاف سنت کام کیا مگر طلاقیں تینوں واقع ہوجائیں گی لیکن بعض لوگ اسے ایک طلاق سمجھتے ہیں۔ اب دیکھیں کہ احتیاط کس امر میں ہے اگر مطلقہ ثلثہ سے رجوع کرلیاگیا تو جمہور علمائے محدثین و آئمہ اربعہ کے نزدیک وہ رجوع جائز نہ ہوا اور اگر رجوع نہ کیاگیا اور اس عورت نے بعد عدت کسی دوسرے سے نکاح کرلیا تو یہ نکاح سب کے نزدیک جائز ہوا کیونکہ مجوزین رجوع بھی اسے ناجائز نہیں کہتے تو معلوم ہوا کہ امام صاحب میں احتیاط ہے۔
 

وما علینا الاالبلاغ المبین
 

پچھلا صفحہ                             اگلا صفحہ

ہوم پیج